بہار پنچایت انتخابات میں64.58لاکھ نئے ووٹر

https://www.urdu.indianarrative.com/Bihar_Panchayat_elections.jpg

بہار پنچایت انتخابات

بہار پنچایت انتخابات میں64.58لاکھ نئے ووٹر

اس بار 6,44,54,749 رائے دہندگان کریں گے اپنے نمائندوں کی قسمت کا فیصلہ

پٹنہ ، 21 فروری (انڈیا نیرٹیو)

بہار میں تین درجے کے پنچایت انتخابات کو لے کر ووٹر وں کی حتمی فہرست شائع کر دی گئی ہے۔ نئے ووٹر لسٹ کے مطابق بہار میں ووٹروں کی کل تعداد 6 کروڑ 44 لاکھ 54 ہزار 749 ہوگئی ہے۔ 2016 میں ہوئے پنچایت انتخابات کے مقابلے میں اس بار ووٹروں کی تعدادمیں 64 لاکھ 58 ہزار 876 کا اضافہ ہوا ہے۔ 

ارول سے سب سے کم درخواست 

ووٹر لسٹ میں نئے نام شامل کرانے کے لیے سب سے زیادہ درخواست سہرسہ سے 40062 آئے ہیں۔ ویشالی سے 32646، گوپال گنج سے 24990، پٹنہ سے 24811 اور مشرقی چمپارن سے 23334درخواست آئے تھے۔ سب سے کم درخواست والے اضلاع میں ارول سے 691، شیوہر سے 1707 ، لکھی سرائے سے 1931، جب کہ کشن گنج سے 1988 درخواست آئے۔ 

نام ترمیم کے لیے 3302 درخواست

نئے نام شامل کرنے کے لیے مجموعی طور پر 3 کروڑ 78 لاکھ 408 درخواستیں موصول ہوئیں ، جن میں سے 84 فیصد درخواستیں قبول کی گئیں ۔ جن درخواستوں کو مسترد کیا گیا ہے ان کی تعداد 61,820 ہے۔ نام ترمیم کے لیے 3302 درخواست آئے جن میں سے 2515 کومنظور  کیا گیا ہے۔ لسٹ سے نام ہٹانےکے لیے 7148 درخواست آئے تھے۔ جن میں سے 2840 درخواست کو منظور کیا گیا۔ 

10لاکھ سے زیادہ دیہی علاقوں کے نئے ووٹرز

ریاست کے تمام اسمبلی حلقوں کی حتمی ووٹر لسٹ 15 فروری کو ہندوستانی الیکشن کمیشن نے شائع کی ہے۔ ووٹر لسٹ میں کل 14 لاکھ 66 ہزار نئے ووٹرز کو شامل کیا گیا ہے۔ 10 لاکھ سے زیادہ ووٹر دیہی علاقوں سے ہیں ، جن کی کارروائی ریاستی الیکشن کمیشن نے پنچایت کے انتخابی فہرستوں میں ان کے نام شامل کرنے کے لیےکی ہے۔