وزیر اعظم نے طلبا کو خود آگہی ، خود اعتماد اور بلا غرض کا منتر بتایا

https://www.urdu.indianarrative.com/PM.jpg

وزیر اعظم نریندر مودی

وزیر اعظم نے طلبا کو خود آگہی ، خود اعتماد اور بلا غرض کا منتر بتایا

انجینئرہونے کے ناطے آپ میں پیٹرن سے پیٹنٹ تک لے جانے کی صلاحیت: مودی

نئی دہلی ، 23 فروری (انڈیا نیرٹیو)

 وزیر اعظم نریندر مودی نے منگل کے روز ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے آئی ٹی کھڑگ پور کی کانووکیشن تقریب سے خطاب کیا۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے طلباءکو خوداگہی ، خود اعتمادی اور بے لوث کے تین منتر دیئے۔

انہوں نے کہا کہ طلبا کو اپنی صلاحیت کو پہچاننا چاہئے اور آگے بڑھنا چاہیے ۔ پورے اعتماد کے ساتھ آگے بڑھنا چاہیے ، بے لوث رہنے کے ساتھ آگے بڑھنا چاہیے۔ زندگی کی جس راہ پر آپ آگے بڑھ رہے ہیں ، یقینا آپ کے سامنے اس میں بہت سارے سوالات آئیں گے ۔

یہ راستہ ٹھیک ہے ، غلط ہے ، نقصان تونہیں ہوگا ، وقت توضائع نہیں ہوگا؟ ایسے بہت سارے سوالات سامنے آئیں گے۔تمام لوگ جو سائنس ، ٹکنالوجی اور جدت طرازی کے راستے پرچلے ہیں ،اس میں جلدبازی کی کوئی جگہ نہیں ہے۔ آپ نے جوسوچا ہے ، آپ جس جدت طرازی پر کام کر رہے ہیں ،ممکن ہے اس میں آپ کو مکمل کامیابی نہ مل سکے ہے ، لیکن آپ کی اس ناکامی کو بھی کامیابی سمجھا جائے گا ، کیوں کہ آپ اس سے بھی کچھ سیکھیں گے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ بات انٹرنیٹ آف تھنگس ہو یا جدید تعمیراتی ٹیکنالوجی ، آئی آئی ٹی کھڑگ پور قابل ستائش کام کر رہی ہے۔ کورونا کے خلاف جنگ میں آپ کے سافٹ ویئر سمادھان ملک کے کام آرہے ہیں۔ اب آپ کو ہیلتھ ٹیک کے فیوچرسٹک سالیوشنس پربھی تیزی سے کام کرنا ہوگا۔

 آج ہندوستان ان ممالک میں سے ایک ہے جہاں شمسی توانائی کی فی یونٹ قیمت بہت کم ہے لیکن گھر گھر تک شمسی توانائی کی فراہمی کے لیےابھی بھی بہت سارے چیلنجز ہیں۔ ہندوستان کو ایسی ٹکنالوجی کی ضرورت ہے جو ماحول کو کم سے کم نقصان پہنچائے ، پائیدار ہو اور لوگ اسے زیادہ آسانی سے استعمال کرسکیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ اکیسویں صدی کے ہندوستان کی صورت حال بھی بدل گئی ہے ۔ ضرورتیں بھی بدلی ہیں اور خواہشات بھی تبدیل ہوگئیں۔ اب آئی آئی ٹی کو انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی ہی نہیں بلکہ انسٹی ٹیوٹ آف انڈیجنس ٹکنالوجی میں بھی نیکسٹ لیول پرلے جانے کی ضرورت ہے۔

 اس کیمپس سے نکل کر ، آپ کو نہ صرف اپنی نئی زندگی کا آغاز نہیں کرنا ہوگا ، بلکہ آپ کو اسٹارٹ اپس بھی بنانے ہوں گے جو ملک کے کروڑوں لوگوں کی زندگی کو بدل دے گی۔ یہ جو ڈگری ، یہ تمغہ آپ کے ہاتھ میں ہے ، یہ لاکھوں امیدوں کا ایک امنگ دستاویز ہے جو آپ کو پورا کرنا ہے۔ ایک انجینئر کی حیثیت سے ، آپ میں صلاحیت پیدا ہوتی ہے اور وہ ہے چیزوں کو پیٹرن سے پیٹنٹ تک لے جانے کی صلاحیت۔ یعنی ، ایک طرح سے آپ میں مضامین کو زیادہ وسیع نظر ی سے دیکھنے کی صلاحیت ہوتی ہے۔